بابر اعظم کی ریکارڈ ساز بیٹنگ

sample-ad

انگلینڈ کے خلاف تین ایک روزہ میچوں کی سیریز کے آخری میچ میں پاکستانی ٹیم نے کپتان بابر اعظم کی ریکارڈ ساز بیٹنگ کی بدولت میزبان انگلینڈ کو جیت کے لیے 332 رنز کا ہدف دیا ہے

منگل کو ایجبسٹن گراؤنڈ میں کھیلے گئے میچ میں انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بولنگ کا فیصلہ کیا، پاکستان کی ابتدائی وکٹ جلد گرنے سے یوں لگا کہ شاید انگلش کپتان بین سٹوکس کا فیصلہ درست تھا لیکن ایک اینڈ پر مسلسل کھڑے پاکستانی کپتان نے اپنی 158 رنز کی اننگز کے ذریعے اسے غلط ثابت کر دیا

بابراعظم کی انفرادی اننگز جہاں کسی بھی پاکستانی کھلاڑی کی انگلش ٹیم کے خلاف سب سے بڑا انفرادی سکور رہا وہیں انہوں نے پاکستانی ٹیم کے کپتان کی جانب سے انگلینڈ میں میزبان سائیڈ کے خلاف سنچری بنانے کا عمران خان کا ریکارڈ بھی توڑ دیا

عمران خان نے 1983 میں انگلینڈ کے خلاف اسی کی سرزمین پر سنچری اننگز کھیلی تھی

بابر اعظم پہلے پاکستانی کھلاڑی ہیں جنہوں نے انگلش ٹیم کے خلاف اسی کی سرزمین پر تین سنچری اننگز کے ساتھ ایک ہزار رنز کا سنگ میل عبور کیا ہے

بابر اعظم نے دنیائے کرکٹ میں سب سے کم 81 اننگز کھیل کر 14 سنچریاں بنانے کا ریکارڈ بھی اپنے نام کرلیا

اس سے قبل یہ اعزاز ہاشم آملہ کے پاس تھا جنہوں نے 84 اننگز کھیل کر یہ کارنامہ سرانجام دیا تھا۔ ڈیوڈ وارنر نے 84 جب کہ انڈین کرکٹ ٹیم کے کپتان وراٹ کوہلی نے اس مرحلے تک پہنچنے کے لیے 103 اننگز کھیلی تھیں

139 گیندوں پر 158 رنز پر مشتمل بابراعظم کی اننگز 14 چوکوں اور چار چھکوں سے مزین رہی۔ 198 منٹ تک کریز پر رہنے والے گرین شرٹس کے کپتان نے 113.66 کے سٹرائیک ریٹ کے ساتھ اپنے کیریئر کی یادگار اننگز کھیلی

شہریار خان آفریدی کا یومِ شہدائے کشمیر کے موقع پر ٹویٹ

بابراعظم نے نائب کپتان محمد رضوان کے ساتھ مل کر تیسری وکٹ کی شراکت میں 179 رنز بنائے، جو انگلینڈ کے خلاف پاکستانی کھلاڑیوں کی شراکت کا سب سے بڑا سکور ہے

پاکستانی بیٹنگ کے مقررہ 50 اوورز مکمل ہونے سے کچھ دیر قبل بابر اعظم آؤٹ ہو کر پویلین لوٹے تو گراؤنڈ میں موجود تماشائیوں نے اپنی نشستوں پر کھڑے ہو کر اور تالیاں بجا کر انہیں داد دی۔l

sample-ad

Facebook Comments

POST A COMMENT.