عامرلیاقت حسین کی سابقہ اہلیہ سیدہ بشریٰ اقبال نےطلاق کی تصدیق کردی

sample-ad

پی ٹی آئی رہنما، ٹی وی میزبان اور اسکالرعامرلیاقت حسین کی سابقہ اہلیہ بشریٰ اقبال نے پہلی بارتصدیق کی ہے کہ عامر لیاقت انہیں طلاق دے چکے ہیں اور ایسا انہوں نے سیدہ طوبیٰ عامر کے کہنے پرکیا

طوبیٰ سے عامرلیاقت کی شادی کی خبر جولائی 2018 میں منظر عام پرآئی تھی جب عام انتخابات کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کے دوران عامرلیاقت نے دوسری شادی کا اعتراف کیا تھا

اس سے قبل یہ شادی خفیہ رکھی گئی تھی

عامرلیاقت نے سوشل میڈیا پرگردش کرتی خبروں کے باوجود دوسری شادی کی باقاعدہ تصدیق دسمبر 2018 میں کی تھی

49 سالہ عامر کی دوسری اہلیہ ان سے عمرمیں کافی چھوٹی ہیں جس پر انہیں خاصی تنقید کا نشانہ بھی بنایا گیا تھا

بعد ازاں انسٹاگرام پر آسک می سیشن میں طوبیٰ کا کہنا تھا کہ تمام احباب ہمارے نکاح سے باخبرتھے

ایک ٹی وی چینل نے الیکشن کے دنوں میں عامر کی انتخابی مہم پر اثرانداز ہونے کے لیے اس خبر کو چٹپٹا بنا کر پیش کیا

حالانکہ اس وقت رخصتی نہیں ہوئی تھی جو ہم اس خبر کوعام کرتے

اس دوران عامرلیاقت کی پہلی اہلیہ بشریٰ اور ان کے دونوں بچوں خصوصاً بیٹی دُعا کی جانب سے بھی سوشل میڈیاپرردعمل دیکھنے میں آیا تھا

دُعا نے اس تمام صورتحال کا ذمہ دار طوبیٰ کو ٹھہرایا تھا

عوامی سطح پر بھی بڑی تعداد نے بشریٰ کی حمایت کی تاہم ایسا پہلی بار ہوا ہے کہ 2 سال بعد بشریٰ کی جانب سے طلاق کی خبرسامنے لائی گئی

انسٹاگرام اکاونٹ پربشریٰ نے لکھا ” سلام ، میرے خیال سے میرے سابق شوہرعامرلیاقت کے ساتھ تعلق کو واضح کرنے کا وقت آگیا ہے، وہ مجھے طلاق دے چکے ہیں”

بشریٰ نے مزید لکھا ؛”مجھے طلاق دینا ایک الگ معاملہ ہے لیکن طوبیٰ کے کہنے پر اس کے سامنے فون کال پر طلاق دینا شاید میرے اور میرے بچوں کیلئے سب سے زیادہ تکلیف دہ چیز تھی، میں یہ معاملہ اللہ پرچھوڑتی ہوں ”

بشریٰ کی جانب سے یہ واضح نہیں کیا گیا کہ عامر لیاقت نے انہیں کب طلاق دی تھی

انسٹا فالوورز نے اس پوسٹ کے جواب میں بشریٰ کے ساتھ ہمدردی کا اظہارکرتے ہوئے تبصرے کیے

سیدہ بشریٰ اقبال بھی اسکالراوردرس وتدریس سے وابستہ ہیں

اپنا یوٹیوب چینل چلانے کے علاوہ وہ رمضان ٹرانسمیشن کی میزبانی بھی کرچکی ہیں

sample-ad

Facebook Comments

POST A COMMENT.