غلنئی بازار میں احتجاجی مظاہرہ

sample-ad

مہمند(افضل صافی) ہیڈکوارٹر غلنئی بازار میں بجلی کی طویل اور ناروا لوڈشیڈنگ کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا گیا

پشاور باجوڑ شاہراہ کو 2 گھنٹوں تک ہر قسم آمدورفت کے لئے مکمل بند رکھا گیا

مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جس پر واپڈا کے خلاف نعرے درج تھے

ہیڈکوارٹر غلنئی میں مہمند پریس کلب کے سامنے علاقے میں سخت گرمی میں طویل اور ناروا لوڈشیڈنگ کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ہوا

جس میں پی پی پی کے فضل ہادی، پی ایم ایل این کے حاجی بہرام خان، جماعت اسلامی کے خاندان خان عوامی نیشنل پارٹی کے ورکرز اور مختلف سیاسی جماعتوں کے اہلکاروں سمیت علاقے کے عوام نے کثیر تعداد میں شرکت کی

طویل ترین بریک ڈاون کا سلسلہ بدستور جاری

واپڈا اہلکاروں کے خلاف شدید نعرہ بازی کی گئی اور 2 گھنٹوں تک پشاور باجوڑ شاہراہ ہر قسم آمدورفت کے لئے بند رکھا

جس میں مریضوں، بچوں سمیت مسافروں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑا

احتجاجی مظاہرین کے خلاف مقررین نے منتخب عوامی نمائندوں اور واپڈا اہلکاروں پر سخت تنقید کی اور کہا کہ مہمند قوم کے ساتھ جانوروں جیسا سلوک کیا جاتا ہے

لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 22 گھنٹوں تک پہنچ گیا ہےجبکہ منتخب نماٸندوں اور سٹیل ملز اور ماربل فیکٹریوں کو 24 گھنٹے بجلی فراہم کی جاتی ہے

انہوں نے کہا کہ واپڈا اہلکار شیڈول کے مطابق بجلی فراہم کریں ورنہ سخت احتجاجی دھرنا دینگےجس کی تمام تر ذمہ داری متعلقہ اہلکاروں پر ہوگی

مظاہرہ سے مختلف سیاسی جماعتوں کے کارکنان نے بھی تقاریر کیں

مظاہرین نے فیصلہ کیا کہ اگر 15 جون تک بجلی کی لوڈشیڈنگ ختم نہیں کی تو پھر ہمیں ذمہ دار نہ ٹھہرایا جائے

بعد میں تحصیلدار حلیمزئی رحمان گل،پولیس ڈی ایس پی لیاقت خان اور ایس ایچ او امجد خان نے مظاہرین سے کامیاب مذاکرات کر کے احتجاجی مظاہرہ کو ختم کر کے شاہراہ کو ہر قسم آمدورفت کے لئے کھول دیا

احتجاج کے دوران مریضوں، بچوں مسافروں اور عوام کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑا

ضلع بھر میں سخت گرمی میں مسلسل 22 گھنٹے ناروا لوڈشیڈنگ کی جاتی ہے

علاقے میں پینے کا پانی ناپید ہو گیا ہے اور بھار ی قیمت پر لوگ دور دراز علاقوں سے پانی لانے پر مجبور ہو گئے ہیں

sample-ad

Facebook Comments

POST A COMMENT.