لاطینی امریکہ کے ملک پیرو کا صدراتی انتخاب سکول ٹیچر نے جیت لیا

sample-ad

لاطینی امریکہ کے ملک پیرو کا صدراتی انتخاب ایک سکول ٹیچر نے جیت لیا جن کا تعلق سو شلسٹ پارٹی سے ہے

تفصیلات کے مطابق پیرو میں ہونے والے صدرارتی انتخابات میں اس دفعہ حیران کن طور پر بائیں بازو کی سوشلسٹ جماعت (فری پیرو) کے امیدوار پیدروکاستیلو دائیں بازو کی امیدوار کائیکو فوجیموری کو سخت مقابلے میں شکست دیکر ملک کے صدر بن گئے ہیں

پیرو کے نو منتخب صدر پیدروکاستیلو کا تعلق دیہی علاقے سے ہے وہ ایک ایلیمنٹری سکول ٹیچر تھے جبکہ ان کے والد بھی ایک غریب مزدور تھے

انہوں نے 2017 میں بجٹ کٹوتیوں کے خلاف ہونے والی استادوں کی ہڑتال کو منظم کیا تھا بعد ازاں انتخابی سیاسی میدان میں آنے کا فیصلہ کیا

سری نگر ہائی وے پر قتل کی واردات میں ملوث باپ بیٹا اور بھتیجا گرفتار

پیدروکاستیلو کی پہچان ان کے ہاتھ میں قلم اور سر پر ہیٹ ہے، جبکہ ان کی جماعت کے سرخ جھنڈے میں بھی قلم کا نشان ہے

صدارتی انتخابات میں انہوں نے سوشلسٹ منشور پیش کیا تھا جو صحت، تعلیم اور مزدروں کے حقوق کی ترجمانی کرتا تھا جبکہ ان کا مقابلہ پیرو کے امیر ترین سیاسی خاندان سے تھا جو گزشتہ کئی سالوں سے پیرو میں برسرِ اقتدار تھا

بین القوامی خبر رساں ادارے کے مطابق ابتدائی نتائج میں دائیں بازو کی کائیکو فوجیموری کو پیدروکاستیلو کے مقابلے میں برتری حاصل تھی لیکن ان کی کامیابی کا تناسب شہری علاقوں میں زیادہ تھا تاہم جیسے ہی دیہاتی علاقوں سے نتائج آنا شروع ہوئے تو وہاں سے پیدروکاستیلو نے برتری حاصل کرنا شروع کر دی

sample-ad

Facebook Comments

POST A COMMENT.