لاپتہ افراد کےخلاف احتجاجی مظاہرہ

sample-ad

مہمند(افضل صافی)صوبائی صدر عوامی نیشنل پارٹی ایمل ولی خان کے ہدایت پر صوبے بھر کی طرح ضلع مہمند میں بھی لاپتہ افراد کےخلاف احتجاجی مظاہرہ کیا گیا

جس میں اے این پی کے ضلعی صدر ملک سیف اللہ مومند, نائب صدر نیاز خان, کونسل ممبر ثمر خان, جاوید خان, ارشد خان,خواجہ محمد اور صدام گل کے علاوہ سینئر کارکنان نے شرکت کی

اس موقع پر شرکاء سے خطاب میں ضلعی صدر ملک سیف اللہ نے کہا کہ لاپتہ افراد کے لواحقین کئ عرصے سے سراپا احتجاج ہیں لیکن انکی فریاد سننے والا کوئی نہیں

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں آئین اور قانون موجود ہیں جسکی رو سے ہرقسم کے جرائم میں ملوث افراد کو سزا دینے کا قانون موجود ہے

انہوں نے کہا کہ ریاست ماں کی طرح ہوتی ہیں جسکا کام اپنے عوام کا تحفظ کرنا ہوتا ہے لیکن بدقسمتی سے ہماری ریاست پختونوں کے ساتھ سوتیلی ماں کا سلوک کررہی ہے

کمشنر پشاور ڈویژن امجد علی خان کا قبائیلی ضلع مہمند کا تفصیلی دورہ

اگر کسی نے کوئی جرم کیا ہے تو اسکو عدالت کے سامنے پیش کرکے سزادی جائیں ناکہ انکو غائب کرکے انکی لاش ملتی ہے اور کوئی اسکی ذمہ داری بھی قبول نہیں کرتا

انہوں نے کہا کہ پختون قوم مزید اس قسم کی حرکات برداشت نہیں کرینگے انکے ساتھ دوسرے شہریوں کی طرح سلوک کیا جائے اور وہ تمام ائینی حقوق دیے جائیں جو ملک کے دوسرے شہریوں کو حاصل ہیں

ضلعی نائب صدر نیاز خان نے خطاب میں کہا کہ کہ ھر ملک امریت,شہریت اور جمہوریت کی شکل میں ایک قانون ہوتا ہے لیکن افسوس سے ہمارے ملک میں کوئی بھی قانون نہیں ہے

اس ملک میں شہریوں اورخاص کر پختونوں کو غائب کیا جاتا ہے اور بعد میں انکی یا تو تشددزدہ لاش مل جاتی یا وہ بھی نہیں ملتی

انہوں نے کہا کہ یہ مسلمان ہے اور اسلام اور دوسرا کوئی بھی مذھب کسی کے ساتھ اس طرح کا سلوک کی اجازت نہیں دیتا

انہوں نے مطالبہ کیا کہ لاپتہ افراد کو فوری طور پر عدالتوں کے سامنے پیش کیا جائے اور اگر انہوں نے کوئ جرم کیا ہے تو انکو آئین اور قانون کے مطابق سزا دی جائے

اور اگر بے قصور ہیں تو انکو رہا کیا جائے کیونکہ انکے بیوی بچے اور مائیں کئی سالوں سے انکے انتظار میں بیٹھ کر انتہائی کربناک حالات سے گزر رہے ہیں

sample-ad

Facebook Comments

POST A COMMENT.